اہم ترین خبریںمقبوضہ فلسطین

یہودی آباد کاروں کےچاقو حملے میں فلسطینی شہری علی حسن حرب شہید

شیعیت نیوز: یہودی آباد کاروں نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر سلفیت میں ایک فلسطینی شہری علی حسن حرب کو چاقو کے وار کرکے شہید کردیا۔ فلسطینی وزارت صحت نے ایک نوجوان کی موت کی تصدیق کی ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ ایک اسرائیلی آباد کار نے سلفیت کے علاقے اسکاکا میں نوجوان 27 سالہ علی حسن حرب کے سینے میں چاقو گھونپ دیا۔

وزارت صحت کی جانب سے اعلان کرنے سے قبل اسے تشویشناک حالت میں اسپتال لے جایا گیا تھا۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ فلسطینیوں اور آباد کاروں کے درمیان اس وقت جھڑپیں ہوئیں جب وہ اسکاکا میں ایک پہاڑ پر قبضہ کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ ایک آباد کار نے ایک فلسطینی کو چاقو سے وار کیا جبکہ نوجوانوں نے اپنی زمینوں پر آبادکاروں کے حملے روکنے کی کوشش کرہا تھا۔

قابض اسرائیلی افواج اور ان کے آباد کاروں نے حالیہ مہینوں میں فلسطینی عوام کے خلاف مجرمانہ جارحیت میں اضافہ کیا ہے۔ اس سال کے آغاز سے اب تک 70 شہری شہید ہو چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : گوادر تک بجلی لائن کی تعمیر کیلئے ایرانی کمپنی سے معاہدے پر دستخط ہوگئے

دوسری جانب حماس نے 27 سالہ فلسطینی انجینئر علی حسن حرب کی شہادت پر تعزیت کا اظہار کیا ہے، جس کے دل میں ایک یہودی آباد کار نے چھرا گھونپا تھا کیونکہ "وہ مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر سلفیت کے قریب اسکاکا قصبے پر اسرائیلی آباد کاروں کے حملے کی مزاحمت کر رہا تھا۔”

منگل کی شام جاری کردہ ایک بیان میں، حماس نے اس جرم کو "فلسطینی عوام اور ان کے مقدس مقامات اور املاک پر اسرائیلی آباد کاروں کی طرف سے شروع کی گئی خوفناک جنگ میں توسیع” قرار دیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ اسرائیلی ریاستی سرپرستی میں ہونے والا واقعہ ہے، جس نے آباد کاروں کو تاریخی فلسطین میں منظم دہشت گردی کی چھوٹ دے رکھی ہے ۔

تحریک نے اس بات پر زور دی کہ فلسطینی عوام اسرائیلی قابض افواج اور استعماری آباد کاروں کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمیشہ تیار رہیں گے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button