یمن

سعودی فوج کے ہاتھوں 25 یمنیوں پر شدید تشدد اور 7 افراد کی شہادت

شیعیت نیوز: یمنی وزارت صحت نے آج (جمعہ کو) اعلان کیا کہ صعدہ صوبے کے الرقو علاقے میں 25 یمنی شہریوں کو شدید تشدد کا نشانہ بنا کر ہلاک کر دیا گیا۔

سبانت ویب سائٹ کے مطابق، بیان میں کہا گیا ہے کہ تشدد کا نشانہ بننے والے سات افراد بالآخر اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے اور ان کی لاشیں صعدہ کے جمہوری اسپتال لے جائی گئیں۔ ان افراد کو بجلی کے کنکشن لگا کر شدید تشدد کا نشانہ بنانے کے ساتھ ساتھ مصنوعی طور پر ڈبو دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : مقتدر قوتوں کی آنکھ مچولیاں پاکستان کو خدانخواستہ سری لنکا جیسی صورتحال کی طرف لے جا رہی ہے،علامہ راجہ ناصرعباس

یمنی وزارت صحت نے اس ظلم پر دنیا کی خاموشی کی شدید مذمت کی اور عالمی برادری کی خاموشی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انسانی اور بین الاقوامی قوانین کی مخالفت کا اظہار کیا۔

ایک بیان میں انسانی حقوق کی تنظیم عین نے کہا کہ ہلاکتوں میں اضافے کا امکان ہے، اس سے ’’وہابی تکفیری‘‘ سعودی حکومت کا اصل چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے، جو دوسروں کے ساتھ بقائے باہمی کو برداشت نہیں کرتی، اور ظاہر کیا کہ تمام الزامات یہ ہیں۔ سعودی عرب میں اصلاحات کے بارے میں جھوٹ کے سوا کچھ نہیں۔

یہ بھی پڑھیں : جیل جانے اور جان قربان کرنے کوتیارہوں لیکن امریکی غلامی کسی صورت قبول نہیں، عمران خان

عالمی برادری کی خاموشی پر تنقید کرتے ہوئے انسانی حقوق کے ادارے نے امریکا کے دوہرے معیار پر بھی تنقید کی اور اقوام متحدہ، سلامتی کونسل اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپنا کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا۔

17 مئی کو یمن کی انسانی حقوق کی وزارت کے قائم مقام سربراہ علی الدلمی نے کہا کہ سعودی عرب نے یمن میں جنگ بندی اور اسیران کے معاملے میں کردار ادا کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close