اہم ترین خبریںپاکستان

قرآن بورڈ کی تنظیم نوء میں شیعہ اور اہلحدیث 2 علماء کی سکیورٹی کلیئرنس نہ مل سکی

ذرائع نے بتایا کہ سکیورٹی اداروں کی طرف سے اٹھائے گئے قانونی اعتراض پر محکمہ اوقاف کو کلئیر کرنے کیلئے سمری دوبارہ محکمہ اوقاف کو بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے

شیعیت نیوز: پنجاب حکومت کی طرف سے 27 رکنی قرآن بورڈ کی تنظیم نوء میں قانون کی خلاف ورزی پر سکیورٹی اداروں نے اعتراض اٹھا دیئے۔

پاکستانی اخبار ’’جنگ‘‘ کی رپورٹ کے مطابق محکمہ اوقاف کی طرف سے پنجاب قرآن بورڈ میں ترمیم کیلئے بھیجے گئے 8 متبادل ناموں میں سے 2 کی سکیورٹی کلئیرنس بھی نہیں ہو سکی۔ دستاویزات کے مطابق سکیورٹی ادارے کی طرف سے مولانا محمد افضل حیدری اور مولانا یاسین ظفر کی سکیورٹی کلئیرنس نہیں دی گئی۔

سکیورٹی اداروں نے اعتراض اُٹھایا ہے کہ پنجاب قرآن (پرنٹنگ اینڈ ریکارڈنگ) ایکٹ 2011 میں رضاکار ممبران کا ذکر ہی نہیں، اس لئے کوئی بھی قرآن بورڈ کا رضا کار ممبر نہیں بن سکتا، سکیورٹی اداروں کی طرف سے یہ بھی کہا کہ قانون کے مطابق قرآن بورڈ کے ممبران میں مشہور معروف عالم دین اور علماء کرام ہونے چاہئیں۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان سنگین سیاسی و معاشی بحران کا شکار ہے، علامہ شبیر میثمی کی لاہور میں پریس کانفرنس

ذرائع نے بتایا کہ سکیورٹی اداروں کی طرف سے اٹھائے گئے قانونی اعتراض پر محکمہ اوقاف کو کلئیر کرنے کیلئے سمری دوبارہ محکمہ اوقاف کو بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ دونوں علماء اپنے اپنے مکتب فکر کے جید علماء ہیں، علامہ افضل حیدری وفاق المدارس شیعہ پاکستان کے جنرل سیکرٹری اور مولانا یاسین ظفر وفاق المدارس السلفیہ کے سربراہ ہیں۔ مولانا یاسین ظفر رویت ہلال کمیٹی کے بھی رکن ہیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button