دنیا

شام کا تیل چوری کرنے میں امریکی اقدام غیر قانونی ہے، چینی ترجمان ژاؤ لیجیان

شیعیت نیوز: چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے اتوار کو اعلان کیا کہ شام کا تیل چوری کرنے میں امریکہ کا اقدام مکمل طور پر غیر قانونی ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے مزید کہا کہ شامی حکومت کی سرکاری معلومات کے مطابق 2011 سے 2022 کے درمیان امریکہ نے اس ملک کو تیل کی اسمگلنگ کی وجہ سے 100 بلین ڈالر سے زیادہ کا نقصان پہنچایا۔

ژاؤ نے واضح کیا کہ شام میں امریکی افواج کی تعیناتی اور امریکہ کی طرف سے اس ملک سے تیل اور اناج کی اسمگلنگ غیر قانونی ہے۔

شام کے خلاف امریکی میزائل حملے کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے، انہوں نے نشاندہی کی کہ امریکہ بین الاقوامی قوانین اور ضوابط کی مسلسل خلاف ورزی کر رہا ہے، اور پھر بھی وہ دعویٰ کرتا ہے کہ وہ ’’قواعد پر مبنی بین الاقوامی نظام‘‘ کا چیمپئن ہے۔

چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے مزید کہا کہ امریکہ جہاں امن و امان کی اہمیت کی بات کرتا ہے، وہ اکثر اپنے مفادات کے لیے قدم اٹھانے اور دنیا میں اپنا تسلط بڑھانے کی کوشش کرتا ہے۔

لیجیان نے یہ بھی کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ عالمی برادری اس معاملے میں اندھی نہیں ہے اور وہ احتیاط سے کام لے گی۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیلی صدر ہرتزوگ کے دورۂ بحرین کے موقع پر تل ابیب ایئرپورٹ کی چیک پوسٹ پر حملہ

دوسری جانب شام کی فوج نے ترکی کی جانب سے زمینی حملے شروع کرنے سے متعلق دھمکی آمیز بیان کے بعد شمالی سرحد پر اپنی فوجی قوت بڑھانے اور جدید ترین ہتھیار بھجوانے کا اعلان کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق شام کی فوج نے ترکی کی بری فوج کا مقابلہ کرنے کیلئے صوبہ حلب کے سرحدی شہروں تل رفعت اور عین العرب میں ٹینک، بکتر بند گاڑیاں اور جدید ترین ہتھیاروں سمیت سیکڑوں فوجیوں کو تعینات کیا ہے تاکہ ترکیہ کے ممکنہ زمینی حملوں کا مقابلہ کیا جا سکے۔

گزشتہ چند دنوں کے دوران ترکی کی فوج اور اس سے وابستہ آلہ کار نیم فوجی ملیشیا نے شمالی الرقہ اور عالمی شاہراہ پر حملے کر کے اسے نقصان پہنچایا۔

ترک فوج نے دہشت گردوں کے خلاف جنگ کے بہانے شمالی اور شمال مشرقی شام کے متعدد علاقوں پر قبضہ کر رکھا ہے۔

واضح رہے کہ عراق اور شام کی حکومتیں اپنی سرحدوں کے اندر ترکی کے فوجی اقدامات کو جارحیت قرار دے کر اُسے غیرقانونی قرار دے چکی ہیں تاہم ابھی تک انقرہ نے بغداد اور دمشق کے احتجاج پر کان نہیں دھرے ہیں اور وہ بدستور دونوں ممالک میں اپنے جارحانہ اقدامات کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے

متعلقہ مضامین

Back to top button