مشرق وسطی

مصر کے ایک بڑے چرچ میں خوفناک آتشزدگی کے باعث 41 افراد ہلاک، 55 زخمی

شیعیت نیوز: مصر کے ایک بڑے چرچ میں اچانک آگ بھڑک اُٹھی، جس میں بری طرح جھلس کر 41 افراد ہلاک اور 55 شدید زخمی ہوگئے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق واقعہ اہرام مصر کے لیے مشہور الجیزہ شہر میں پیش آیا جہاں ایک مذہبی تقریب میں شرکت کے لیے 5 ہزار افراد جمع تھے۔

عرب میڈیا کے مطابق مصر کے علاقے الجیزہ میں قبطی عیسائیوں کے ایک بڑے چرچ میں دعائیہ اجتماع تھا جس میں 5 ہزار سے زائد افراد شریک تھے۔ اچانک چرچ میں آگ بھڑک اُٹھی جس نے پورے چرچ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

یہ بھی پڑھیں : ہمارے دقیق اور سٹیک میزائل پورے اسرائیل کو نشانہ بنا سکتے ہیں، حزب اللہ

خوفناک آگ اتنی تیزی سے پھیلی کہ کسی کو چرچ سے باہر نکلنے کا موقع نہیں مل سکا۔ آگ چرچ کے داخلی راستے پر لگی جس سے بھگدڑ مچ گئی اور درجنوں افراد پیروں تلے کچلے جانے کے باعث زخمی ہوگئے۔

آگ بجھانے میں فائر بریگیڈ کی 15 گاڑیوں نے حصہ لیا جب کہ 30 ایمبولینسوں میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو اسپتال منتقل کیا گیا۔

خوفناک آتشزدگی میں 41 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کردی گئی جب کہ 55 افراد جھلسی ہوئی حالت میں زیر علاج ہیں۔

ہلاک ہونے والوں میں چرچ کے پادری بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : فلسطینیوں کے املاک کی مسماری، نئی ناجائز یہودی بستیوں کی تعمیر کرنا کھلی جنگ ہے، حماس

حکام کے مطابق آتشزدگی کا واقعہ شارٹ ساکٹ کے باعث پیش آیا، آگ چرچ کے داخلی دروازے پر لگی تھی جس کے باعث بھگدڑ مچ گئی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مرنے والوں میں زیادہ تر بچے ہیں جو بھگدڑ میں پاؤں تلے آکر مارے گئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر آگ لگنے کی وجہ شارٹ سرکٹ لگتی ہے تاہم تفتیش مکمل ہونے تک کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہوگا۔

متعلقہ مضامین

Back to top button