دنیا

نیٹو نے چین کو مغربی ممالک کے مفادات اور سلامتی کیلئے چیلنج قرار دیدیا

شیعیت نیوز: نیٹو نے پہلی بار چین کو مغربی ممالک کے مفادات، سلامتی اور اقدار کے لیے چیلنج قرار دے دیا۔

اسپین میں سربراہی اجلاس میں نیٹو کے نئے اسٹریٹجک تصور (پی ڈی ایف) کو منظور کیا گیا، جو آئندہ دہائی کے لیے اپنی ترجیحات کا تعین کرتا ہے۔

اس دستاویز میں روس کے لیے سخت ترین زبان استعمال کی گئی جس میں مغربی ممالک کے امن اور سلامتی کے لیے ماسکو کو سب سے اہم اور براہ راست خطرہ قرار دیا لیکن کہا کہ بیجنگ کے فوجی عزائم، تائیوان کے خلاف اس کی تصادم پر مبنی بیان بازی اور ماسکو کے ساتھ اس کے بڑھتے ہوئے قریبی تعلقات نے منظم چیلنجز کو جنم دیا۔

نیٹو کے سیکرٹری جنرل جینز اسٹولٹن برگ نے صحافیوں کو بتایا کہ چین اپنی فوجی طاقت کو مزید مضبوط بنا رہا ہے، بشمول جوہری ہتھیار کے ذریعے پڑوسی ممالک کو دھونس دے رہا ہے۔ تائیوان کو دھمکیاں دے رہا ہے، جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے اپنے ہی شہریوں کی نگرانی اور کنٹرول کر رہا ہے اور روس جھوٹ اور غلط معلومات پھیلا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین ہمارا مخالف نہیں ہے لیکن ہمیں ان سنگین چیلنجوں کے بارے میں واضح نظر رکھنی چاہیے۔ اس کے جواب میں چین نے کہا کہ اس نے نیٹو کے اعلان کی سختی سے مخالفت کی اور اسے مکمل طور پر جانبدار وارننگ قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں : شامی بحران کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، مجید تخت روانچی

دوسری جانب ہاوائی میں انجام پانے والا امریکہ کا الٹرا سونک میزائل کا تجربہ ناکام ہوگیا ہے۔

بلومبرگ نے رپورٹ دی ہے کہ یہ میزائل تجربہ بدھ کو انجام دیا گیا ہے تاہم امریکی وزارت جنگ پنٹاگون نے اس الٹرا سونک میزائل کی تفصیلات کے بارے میں کچھ نہیں بتایا. پینٹاگون نے ایک بیان جاری کر کے امید ظاہر کی ہے کہ الٹرا سونک میزائلوں کی دفاعی اور جارحانہ صلاحیتیں صحیح راستے پر ہیں.

پنٹاگون کے ترجمان نے اس بیان میں میزائل تجربے کی ناکامی کی وجہ میزائل کے سسٹم میں تکنیکی خرابی کو بتایا ہے۔ پروٹو ٹائپ ہتھیار کے تجربے میں یہ امریکہ کی دوسری ناکامی ہے جسے "کنونشنل پرامپٹ اسٹرائیک” کے عنوان سے جانا جاتا ہے۔

بائیڈن حکومت نے الٹرا سونک میزائلوں سمیت دورمار میزائلوں کے لئے دوہزار تیئس کے فوجی بجٹ میں سات اعشاریہ دو ارب ڈالر کا تقاضہ کیا ہے۔ سپر سونک میزائل کے تجربے میں امریکہ کی ناکامی ایسی حالت میں ہوئی ہے کہ روس کی وزارت دفاع نے ابھی حال ہی میں زیرکان نام کے الٹرا سونک میزائل کے کامیاب تجربے کی خبردی ہے۔

بحیرہ وائٹ میں ایڈمرل گروشکوف آبدوز سے فائر کیے گئے اس میزائل نے بحیرہ بیرنٹس کے ساحل سے تین سو پچاس کلومیٹر دور زمینی ہدف کو کامیابی سے نشانہ بنایا۔

متعلقہ مضامین

Back to top button