مشرق وسطی

شامی فوج کی حامل بس پر داعش کا دہشت گردانہ حملہ، 13 فوجی جاں بحق

شیعیت نیوز: شام کے صوبے الرقہ میں شامی فوجیوں کی حامل بس پر دہشت گردانہ حملہ ہوا ہے۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا نے اپنی رپورٹ میں اعلان کیا ہے کہ صوبے الرقہ کے مضافاتی علاقے میں شامی فوجیوں کی حامل بس پر ہونے والے دہشت گردانہ حملے میں تیرہ فوجی اہلکار جاں بحق اور دو دیگر زخمی ہوئے ہیں۔

اس دہشت گردانہ حملے کے بارے میں ابھی مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔

یہ بھی پڑھیں : عراقی سیکورٹی فورسز کا آپریشن، داعش کےچھ خفیہ ٹھکانے تباہ

دوسری جانب امریکہ کی ہمہ جہتی حمایت و مدد کے باعث شام میں دہشت گرد گروہ اپنی تباہ کن سرگرمیوں کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔

ایران پریس کی رپورٹ کے مطابق داعش دہشت گرد گروہ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے صوبے الرقہ کے مضافاتی علاقے میں شامی فوجیوں کی حامل بس پر ہونے والے دہشت گردانہ حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

گزشتہ روز شامی فوجیوں کی حامل بس پر ہوئے دہشت گردانہ حملے میں تیرہ فوجی اہلکار جاں بحق اور دو دیگر زخمی ہوگئے تھے۔

اس سے قبل بھی دہشت گردوں نے شام کے صوبے دیرالزور میں عام مسافروں کی ایک بس کو نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں 3 عام شہری جاں بحق اور 20 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : حزب اللہ لبنان کے قیام کی چالیسویں سالگرہ کا جشن

واضح رہے کہ شامی عوام اپنے ملک کے تیل سے مالامال علاقوں سے امریکی و یورپی فوجیوں کے انخلا اور ان کے ہاتھوں تیل کی لوٹ مار بند کرائے جانے کا مطالبہ کرتے رہے ہیں۔

امریکی فوجی غیر قانونی طور پر شام میں موجود ہیں جو شام کا تیل اور اناج لوٹ کر اُسے پڑوسی ممالک کو اسمگل کر رہے ہیں۔

شام کی وزارت تیل کے مطابق غاصب امریکی افواج اور اس کے کرائے کے ایجنٹ مشرقی علاقوں میں روزانہ ستر ہزار بیرل تیل لوٹ رہے ہیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button