اہم ترین خبریںپاکستان

متنازعہ ڈرامہ ’فرقہ عشق‘ کے رائٹر، ڈائریکٹر اور فنکاروں کو اشتہاری قرار دینے کا فیصلہ

شیعیت نیوز: او ٹی ٹی پلیٹ فارم پر چلنے والے متنازعہ ڈرامہ سیریل ’فرقہ عشق‘ کے رائٹر، ڈائریکٹر اور فنکاروں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

 لاہور کے تھانہ سول لائن میں اداکارہ حبا بخاری، ثنا فخر، اداکار ارسلان نصیر، اکبر اسلم، فرحان گوہر، رائٹر خرم عباس اور ڈائریکٹر حسن طلعت کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

ڈرامے کے خلاف درخواست میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ مذکورہ ڈرامے سے لوگوں کے مذہبی جذبات مجروح ہوئے ہیں اس لئے ڈرامے کو فوری طور پر بند کرکے نامزد ملزمان کے خلاف کارروائی کی جائے۔

مقدمہ درج ہونے کے باوجود کوئی قانونی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔

مقدمہ کے مدعی میاں خاور بہلول ایڈووکیٹ نے  کنوینئر شیعہ شہریان علامہ سید وقار الحسنین نقوی، سید منتظر مہدی نقوی ایڈووکیٹ، سید شہزاد زیدی سے ملاقات کی اور ملزمان کی جلد گرفتاری کیلئے لائحہ عمل طے کرنے کا فیصلہ کیا۔

ذرائع کے مطابق اگر ملزمان کو آئندہ چند روز میں گرفتار نہ کیا گیا تو عدالت سے رجوع کرکے اشتہار قرار دینے کی کارروائی کی استدعا کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:شیعیان حیدرکرارؑ کا احتجاج رنگ لے آیا، متنازعہ ڈرامے فرقہ عشق کی پوری ٹیم کےخلاف ایف آئی آر درج

اس موقع پر ایڈووکیٹ ہائی کورٹ میاں خاور علی نے کہا کہ فرقہ واریت پہ مبنی متنازعہ ڈرامہ فرقہ عشق کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

یہ کسی ایک مسلک کا نہیں پاکستان کے تمام مسالک کا معاملہ ہے۔

شیعیان حیدرکرارؑ کی جانب سے اس فرقہ وارانہ منافرت پرمبنی ڈرامے کی کاسٹ اور پروڈیوسرکے خلاف ایف آئی آر کٹوانے کے بعد فرحان گوہر کے پاکستان میں موجود دوست احباب نے اس ڈرامے کی حمایت میں سوشل میڈیا اور دیگر ذرائع پر لابنگ بھی تیز کردی ہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں مختلف موضوعات پہ ڈرامے بنائے جاتے ہیں مگر حساس ترین معاملہ پہ فرقہ واریت پہ مبنی ڈرامہ نے مخصوص مسلک کے افراد کے جذبات کو مجروح کیا گیا ہے۔

قانون نافذ کرنے والے ادارے قانون کے مطابق کارروائی کرتے ہوئے ڈرامہ پہ پابندی عائد کریں اور ملزمان کو قانون کے مطابق سزا دیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button