مقبوضہ فلسطین

فلسطینی عوام اپنی مرضی قابضین پر مسلط کر سکتے ہیں، عبداللطیف القانوع

شیعیت نیوز: فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے ترجمان عبداللطیف القانوع نے کہا کہ نابلس میں ہونے والی جھڑپوں نے ظاہر کیا کہ فلسطینی قوم صیہونی غاصبوں پر اپنی مرضی مسلط کر سکتی ہے۔

عبداللطیف القانوع نے اتوار کے روز ’’ساؤتھ الاقصی‘‘ ریڈیو کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ نابلس اور قدس میں آج صبح کی جھڑپیں فلسطینی جنگجوؤں کی القدس کے دفاع کے لیے جنگ میں داخل ہونے کی تیاری کی علامت ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی قوم اور مغربی کنارے کے جنگجو قابضین کے خلاف ہر روز ایک اور مہاکاوی دکھاتے ہیں اور اس بات پر زور دیتے ہیں کہ ان کا انقلاب اس وقت تک جاری رہے گا جب تک قابضین کو فلسطینی سرزمین سے نکال باہر نہیں کیا جاتا۔

القانوع نے کہا کہ آئندہ دو دنوں میں مسجد الاقصی پر حملہ کرنے کے صیہونیوں کے منصوبے کے لیے انقلابی جوانوں کے ساتھ مضبوط تصادم اور قابضین کو شدید ضربیں لگانے اور مسجد اقصیٰ میں قوم کی وسیع تر موجودگی کی ضرورت ہے۔

یہ بھی پڑھیں : واشنگٹن ایران اور تائیوان کے مسئلے میں آگ سے کھیل رہا ہے، سرگئی لاوروف

حماس کے ترجمان عبداللطیف القانوع نے کہا ہے کہ فلسطینی مجاہدین مسجد الاقصی کے دفاع کے لئے مکمل طور پر تیار ہیں اور نابلس اور بیت المقدس میں ہونے والی مسلحانہ جھڑپیں اس کا منہ بولتا ثبوت ہیں ۔

حماس کے ترجمان نے کہا کہ فلسطین کے عوام اور غرب اردن کے مجاہدین، غاصب صیہونی فوج کو ہر روز ایک نیا جھٹکا دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینی مجاہدین حتمی کامیابی یعنی فلسطینی سرزمین کی مکمل آزادی تک اپنی جد وجہد جاری رکھیں گے۔

حماس کے ترجمان نے زور دیکر کہا کہ آئندہ چند دنوں میں صیہونی شدت پسند مسجدالاقصی پر دھاوا بولنا چاہتے ہیں جس کے لئے فلسطینی نوجوانوں اور انقلابی عوام کی جانب سے مزید مضبوط عزم و ارادے کے اظہار اور غاصب صیہونیوں پر اور بھی کاری ضربیں لگانے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینی عوام کو مسجد الاقصی میں اپنی موجودگی کو بڑھانا ہوگا۔

حماس کے ترجمان نے یہودیوں کی عیدوں کے بہانے مسجد الاقصی کی توہین کی جانب سے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ مسجد الاقصی پر حملہ، ملت فلسطین پر حملے کے مترادف ہے اور فلسطینی عوام کبھی بھی اپنے مقدس مقامات کی توہین اور انہیں صیہونی رنگ دینے کو برداشت نہیں کریں گے۔

انہوں نے زور دیکر کہا کہ ملت فلسطین ہر ممکنہ طریقے سے مسجد الاقصی کا دفاع کرتی رہے گی۔

متعلقہ مضامین

Back to top button