عراق

عراق میں صدر دھڑے کے اراکین پارلیمنٹ کے استعفے منظور

شیعیت نیوز: عراقی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے صدر دھڑے سے وابستہ ڈپٹی اسپیکر اور ستر دیگر اراکین پارلیمنٹ کے استعفے منظور کر لئے۔

عراقی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد الحلبوسی نے صدر دھڑے سے وابستہ ڈپٹی اسپیکر سمیت ستر اراکین پارلیمنٹ کے استعفوں پر دستخط کر دیئے اور اس طرح عراقی پارلیمنٹ میں اب صدر دھڑے کا کوئی پارلیمانی رکن نہیں باقی نہیں رہا ہے۔

اس سے قبل صدر دھڑے کے رہنما مقتدی صدر نے اپنے اراکین پارلیمنٹ کو مستعفی ہونے کی ہدایات جاری کی تھیں۔

عراقی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد الحلبوسی نے اپنے ایک بیان میں صدر دھڑے کے پارلیمانی اراکین کے استعفے منظور کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس دھڑے کو منانے کی بہت کوشش کی گئی مگر اس دھڑے کو رضامند نہیں کیا جا سکا۔

عراق کو موجودہ سیاسی تعطل سے باہر نکالنے میں اس ملک کی جماعتوں کی ناکامی سے اس بات کی عکاسی ہوتی ہے کہ عراق میں سیاسی تعطل صرف مختلف جماعتوں میں مفاہمت و اتفاق رائے سے ہی ختم ہو سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ایران و اسلام کے بدخواہوں کا ہتھیار سافٹ وار اور ثقافتی یلغار ہے، آیت اللہ خامنہ ای

دوسری جانب الانبار کے لقب سے مشہور داعش کا اہم سرغنہ ساتھیوں سمیت ہلاک ہو گیا ہے۔

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق عراق کی مرکزی تحقیقاتی ایجنسی نے کہا ہے کہ داعش کا ایک اہم سرغنہ ابو منصور اور اس کے دیگر 3 دہشت گرد ساتھیوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

عراق کی مرکزی تحقیقاتی ایجنسی کے بیان میں آیا ہے کہ داعش کے دہشت گرد عناصر اور سرغنہ اس وہم و گمان میں تھے کہ صحرائے الانبار ان کیلئے پر امن جگہ ہے اور وہ عراقی عوام اور سکیورٹی فورسز کے خلاف دہشت گردانہ کارروائیاں کر کے اس علاقے میں چھپ جائیں گے، لیکن ہم نے اس علاقے کو ان کیلئے جہنم میں بدل دیا ہے۔

واضح رہے کہ جمعرات کے روز بھی ایف 16 طیاروں نے عراق کے شمالی علاقے کرکوک میں داعش کے دہش گردوں کے اجتماع کے مرکز پر 3 راکٹ داغے جبکہ عراقی جوانوں نے بدھ کے روز بھی صوبہ دیالہ میں داعش کے 4 دہشتگردوں کو گرفتار کیا تھا۔

عراق نے ایران کی مدد سے داعش کو باضابطہ طور پر شکست دی جس کے بعد اب ملک کا کوئی بھی علاقہ اس ٹولے کے اختیار میں نہیں رہا تاہم شکست خوردہ تکفیری جراثیم اب روپوش ہو گئے ہیں جو گاہے بگاہے عوام اور سکیورٹی فورسز پر حملے کرکے امن و امان کی صورتحال کو متاثر کرنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button