اہم ترین خبریںپاکستان

ایم ڈبلیوایم کی مرکزی کابینہ کا اجلاس،شہید قائدؒ کی برسی کے مرکزی اجتماع اور ملک بھرمیں تنظیم سازپر اہم فیصلے

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی ہدایت پر مجلس وحدت صوبہ پنجاب کے لئے ورکنگ کمیٹی کا قیام عمل میں آیا جس کا مقصد پنجاب کے مختلف اضلاع میں تنظیمی فعالیت کی بہتری کے لیے اقدامات کرنا ہیں۔

شیعیت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی نومنتخب مرکزی کابینہ کا دوسرا باضابطہ اجلاس ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا۔اجلاس کی صدارت جماعت کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کی۔

اجلاس میں وائس چیئر مین علامہ سید احمد اقبال رضوی ،جنرل سیکریٹری ناصر عباس شیرازی، ڈپٹی جنرل سیکریٹری سلیم صدیقی، سیکریٹری سیاسیات اسد عباس نقوی ،مرکزی سیکریٹری تنظیم سازی علامہ مقصود ڈومکی ،سیکرٹری ایمپلائز ونگ ملک اقرار حسین،سیکرٹری روابط سید محسن زیدی ،سیکرٹری تعلیم عارف علی جانی ،صدر مجلس علمائے شیعہ علامہ سید حسنین عباس گردیزی شریک تھے۔ سیکرٹری امور خارجہ شفقت شیرازی نے وڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔

جلاس میں شہید قائد کی برسی کی سالانہ تقریب کو حتمی شکل دینے سمیت اہم ملکی و قومی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ 26جولائی کو شہید قائد کی برسی کی مناسبت سے "مہدی برحق” کے عنوان سے اسلام آباد میں شایان شان جلسے کے انعقاد کا فیصلہ کیا گیا۔ جماعت کی کارکردگی مزید بہتر بنانے اور اسے وسعت دینے کے لیے تجاویز و آراء کا بھی تبادلہ ہوا۔

یہ بھی پڑھیں: اولاد کی تربیت میں سیدہ فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا اور مولا علی علیہ السّلام کی سیرت طیبہ نمونہ عمل ہے،علامہ مقصودڈومکی

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی ہدایت پر مجلس وحدت صوبہ پنجاب کے لئے ورکنگ کمیٹی کا قیام عمل میں آیا جس کا مقصد پنجاب کے مختلف اضلاع میں تنظیمی فعالیت کی بہتری کے لیے اقدامات کرنا ہیں۔ کمیٹی کو پنجاب کے اندر تین ماہ میں تنظیم سازی کے عمل کو مکمل کرنے کی ہدایات جاری کی گئیں ہیں۔مذکورہ کمیٹی تین ماہ کے فورا بعد صوبائی شوری کا اجلاس منعقد کرکے صوبائی صدر کے انتخاب کی ذمہ دار ہوگی ۔ملک اقرار حسین کو کمیٹی کا مسئول مقرر کیا گیا۔

کمیٹی کے دیگر اراکین میں علامہ عبدالخالق اسدی ، مولانا حسن رضا ہمدانی ،برادر حسن رضا کاظمی اور ایڈوکیٹ آصف رضا شامل ہیں۔اجلاس میں آزاد جموں کشمیر کے تنظیمی امور پر بھی گفت و شنید کی گئی۔آزادکشمیر کے آرگنائزر علامہ سید یاسر سبزواری،علامہ حسنین گردیزی اور علامہ مقصود ڈومکی بھی اس موقع پر موجود تھے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button