اہم ترین خبریںپاکستان

متعصب سندھ پولیس اور کالعدم سپاہ صحابہ سندھ بھرمیں اربعین واک روکنے کیلئے متحد

سنی رابطہ کونسل کے فرضی نام سے سانگھڑ سمیت مختلف اضلاع میں بینرز اور پوسٹرز آویزاں کرکے ضلعی انتظامیہ سے چہلم امام حسینؑ پر اربعین واک اور مشی جلوسوں پر پابندی کا مطالبہ کیا ہے ۔

شیعیت نیوز: متصب سندھ پولیس اور ملک دشمن دہشت گرد تنظیم سپاہ صحابہ چہلم امام حسینؑ کے موقع پر سندھ بھرمیں نکالی جانے والی اربعین واک کو روکنے کیلئے متحد ہوگئے ہیں۔ضلع سانگھڑ میں اربعین واک، جلوس عزا اور مشی کے خلاف نفرت واشتعال انگیز بینرز آویزاں ، دوسری جانب متعصب ایس ایس پی پولیس خیر پور کی جانب سےضلع بھرمیں مشی جلوسوں کو روکنے کا حکم نامہ جاری کردیا گیا، مومنین میں شدید اشتعال ، کسی بھی صورت عزاداری امام حسینؑ سے دستبردار ہونے سے انکار۔

تفصیلات کے مطابق سعودی نواز دہشت گرد تنظیم سپاہ صحابہ کے سرغنہ اورنگزیب فاروقی نے چہلم امام حسینؑ کے موقع پر سندھ بھرمیں فتنہ فساد برپا کروانے کی سازش پر عمل شروع کروادیا ہے ، سنی رابطہ کونسل کے فرضی نام سے سانگھڑ سمیت مختلف اضلاع میں بینرز اور پوسٹرز آویزاں کرکے ضلعی انتظامیہ سے چہلم امام حسینؑ پر اربعین واک اورمشی جلوسوں پر پابندی کا مطالبہ کیا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: خیرپور پولیس کی شیعہ دشمنی جلوس اربعین میں شریک عزاداروں کا راستہ روک لیا، مہران ہائی پر دھرنا شروع

ذرائع کے مطابق ایس ایس پی ضلع خیرپور نے ایک نوٹیفکیشن بھی جاری کیا ہے جس میں ضلع بھرمیں نکالی جانے والی اربعین واک اور مشی جلوسوں کو روکنے کے احکامات جاری کیئے گئےہیں، نوٹیفکیشن میں مزید کہا گیا ہے کہ شیعہ علماء سے مل کر ان سے عہد نامے لکھوائے جائیں کہ وہ نہ ہی ان اربعین واک کا انتظام کریں گے اور نا ہی انتظام میں کوئی تعاون کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: اربعین حسینی کے زائرین پر خودکش حملوں کا منصوبہ ناکام

واضح رہے کہ چہلم امام حسینؑ قریب آتے ہی سندھ پولیس اور اس کی سرپرستی میں کالعدم سپاہ صحابہ ایک بار پھر فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے کی کوشش میں مصروف ہوگئے ہیں، پاکستان کا آئین ہر شہری کو اس کی مذہبی رسومات کی ادائیگی کی کھلی اجازت دیتا ہے ۔ اس طرح کی رکاوٹیں کسی بھی صورت تسلیم نہیں کی جاسکتیں۔

وزیراعظم پاکستان، وزیر اعلیٰ سندھ ، ڈی جی رینجرز سندھ، آئی جی سندھ فوری طور پر اس غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام کا فوری نوٹس لیں اور بنیادی شہری و مذہبی آزادیوں پر قدغن لگانے والوں کا احتساب کیا جائے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close