مشرق وسطی

بحیرہ احمر میں سعودی ولی عہد ، امیر قطر اور امارات کے قومی سلامتی کے مشیر کی ملاقات

شیعیت نیوز: بحیرہ احمر پر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان، قطر کے امیر تمیم بن حمد آل ثانی اور متحدہ عرب امارات کی قومی سلامتی کے مشیر شیخ تحنون بن زائد نے ملاقات اور گفتگو کی۔

اطلاعات کے مطابق قطر سے سعودی عرب اور امارات کے تعلقات میں ہر گزرتے دن کے ساتھ بہتری آتی جارہی ہے۔ 2017 میں عائد پابندیوں کے بعد اب سعودی عرب اور امارات نے سفارتی و تجارتی تعلقات کی بحالی کا اعلان کردیا ہے ۔

تاہم اب سعودی ولی عہد کے نجی دفتر کے ڈائریکٹر بدر العساکر نے ٹوئٹر پر ایک تصویر شیئر کی ہے جس میں امیر قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی، سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور متحدہ عرب امارات کے قومی سلامتی کے مشیر شیخ تحنون بن زاید آل نہیان ٹی شرٹ اور شارٹس پہنے خوش گوار موڈ میں نظر آرہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : یمن، صوبے شبوہ میں جارح سعودی اتحاد کا وحشیانہ حملہ، 7 افراد شہید

بدر العساکر نے ٹوئٹ کے کیپشن میں لکھا کہ تینوں رہنماؤں کی ملاقات جمعہ کے روز بحیرہ احمر میں ہوئی یہ ایک کلف سے پاک اور برادرانہ ماحول میں ہونے والی ملاقات تھی۔

تینوں شہزادوں کے لباس سے بھی ظاہر ہوتا ہے کہ یہ ملاقات نجی ماحول میں ہوئی ہے اور ایسا لگتا ہے کہ تنازعوں کے حل کے لیے شہزادوں نے پکنک پوائنٹ کا انتخاب کیا ہے۔ متحدہ عرب امارات کے مشیر کی امیرِ قطر سے 4 سال بعد ملاقات ہوئی ہے۔

سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر نے دہشت گردی کی حمایت کا الزام عائد کرتے ہوئے 2017 میں قطر پر سفارتی، تجارتی اور سفری پابندی عائد کردی تھیں تاہم قطر نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی تھی۔

رواں برس کے آغاز میں امریکی ثالثی میں قطر کے سعودی عرب اور تین دیگر عرب ممالک کے ساتھ معاہدے میں پیش رفت ہوئی تھی جس کے بعد سعودی عرب اور مصر نے تو سفارتی تعلقات بھی بحال کرلیے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close