مقبوضہ فلسطین

صبرا و شاتیلا قتل عام صیہونیوں کی گردنوں پر لعنت کا طوق ہے، حماس

شیعیت نیوز: اسلامی مزاحمتی تحریک حماس نے کہا ہے کہ صبرا و شاتیلا قتل عام کا واقعہ وقت گذرنے کے ساتھ قابض صیہونی دشمن کے جرائم ساقط نہیں ہوسکتے۔ قابض صیہونی دشمن کے ساتھ مذاکرات وقت اور وسائل کا ضیاع ہے۔ دشمن سے مذاکرات کے ذریعے فلسطینی قوم کے دیرینہ حقوق اور حق خود ارادیت حاصل نہیں کیے جاسکتے۔

رپورٹ کے مطابق لبنان کےصبرا و شاتیلا پناہ گزین کیمپوں میں نہتے فلسطینیوں کے وحشیانہ قتل عام کی 39ویں برسی کے موقعے پر حماس کے شعبہ امور مہاجرین کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ صبرا و شاتیلا میں فلسطینیوں کے قتل عام کا سنیگین جرم صیہونی مجرموں کی گردنوں میں ہمیشہ لعنت کا ایک طوق بن کر رہے گا۔ اس جرم میں ملوث تمام صیہونی جنگی مجرم تھے اور یہ جرم ان کے ماتھوں پر بدنامی کا داغ ثابت ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں : شاہ محمودقریشی نے طالبان کے ہاتھوں قتل ہونے والے ہزاروں شہداء کےورثاءکے زخموں پر پھر نمک چھڑک دیا

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ طاقت کے ذریعے قابض دشمن فلسطینی قوم کو جھکنے پرمجبور نہیں کرسکتا۔ ہمارا ایمان ہے کہ قضیہ فلسطین کا منصفانہ حل جلد ہو کررہے گا۔ جنگی مجرموں کو انسانیت کے خلاف جرائم کا حساب دینا ہوگا۔ وقت گذرنے کے ساتھ جرائم ساقط نہیں کیےجاسکتے۔

حماس کا مزید کہنا تھا کہ جماعت اپنی قوم کے شہدا کا خون کبھی فراموش نہیں کرے گی۔ حماس اور فلسطینی قوم جنگی مجرموں کا تعاقب جاری رکھے گی۔ چاہے طویل زمانے گذرجائیں مگرہم اپنے حقوق اور مطالبات سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

دوسری جانب درجنوں یہودی آباد کاروں نے کل جمعرات یہودیوں کے مذہبی تہوار’یوم کپور‘ کے موقعے پر درجنوں آباد کاروں نے اسرائیلی پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں مسجد اقصیٰ میں گھس کر مسلمانوں کے قبلہ اول کی بے حرمتی کی۔

فلسطینی محکمہ اوقاف کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہےکہ جمعرات کو درجنوں یہودی آباد کاروں،اسرائیلی طلبا اور انٹیلی جنس اہلکاروں سمیت درجنوں انتہا پسندوں نے  قبلہ اول میں گھس کراشتعال انگیز چکر لگائے۔ ہیں

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close