عراق

عراق میں پارلیمانی انتخابات کے نتائج پر اعتراضات کا سلسلہ جاری

شیعیت نیوز: عراق میں پارلیمانی انتخابات کے نتائج پر اعتراض درج کرانے کے لئے اس بار عراقی عوام نے بغداد میں امریکی سفارت خانے کے آس پاس گرین زون علاقے میں دھرنا دیا۔

رپورٹ کے مطابق، معترض عوام نے گرین زون کے سسپنشن پل کے پاس اکٹھا ہو کرامریکہ کے خلاف نعرے لگائے۔ اس دھرنے کے مدنظر بغداد میں امریکی سفارت خانہ الرٹ ہو گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات گناہ کبیرہ ہے، آیت اللہ سید علی خامنہ ای

کچھ ذرائع نے دعوی کیا کہ اعتراض کرنے والے گرین زون پر ہجوم کرنے والے تھے جس کے مدنظر اس علاقے کے چاروں طرف سکیورٹی فورسز کو تعینات کیا گیا۔

بغداد میں المیادین کے نامہ نگار نے پارلیمانی انتخابات کے نتائج پر اعتراض کرنے والوں کے گرین زون پر ہجوم کرنے کے ارادہ سے متعلق خبروں کو بے بنیاد بتایا۔

عراق میں 329 کرسی والے پارلیمانی انتخابات کے ابتدائی نتائج کے مطابق، مقتدی صدر کی قیادت والے صدر دھڑے کو سب سے زیادہ 73 سیٹیں، اس کے بعد محمد الحلبوسی کی قیادت والے تقدم دھڑے کو 38 سیٹیں اور سابق وزیر اعظم نوری المالکی کی قیادت والے قانون کی حکومت نامی دھڑے کو 34 سیٹیں ملیں۔

یہ بھی پڑھیں : شیعہ مکتب فکر کی تکفیر کرنے والے ایڈیشنل کمشنر فیصل آباد ایوب بلوچ کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے، علامہ عبد الخالق اسدی کا مطالبہ

عراق میں پارلیمانی انتخابات کے نتائج کے اعلان کے بعد، کچھ پارٹیوں اور سیاسی دھڑوں نے نتیجہ پر اعتراض کیا اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔

عراق میں کچھ سیاسی شخصیتوں کا ماننا ہے کہ متحدہ عرب امارات، برطانیہ اور امریکہ ملک کے حالیہ انتخابات کے نتائج میں مبینہ دھاندلی میں ملوث رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close