دنیا

مسلمان ممالک کا اپوزیشن کو دبانے کے لیے اسرائیلی جاسوسی نظام کا استعمال

شیعیت نیوز: ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ بعض عرب اور مسلمان ممالک اپنے ہاں اپوزیشن اور حکومت مخالف عناصر کو دبانے کے لیے اسرائیل کا تیار کردہ جاسوسی نظام استعمال کررہے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ  متعدد حکومتوں نے اسرائیلی ساختہ ایک انفارمیشن پروگرام کا استعمال کیا ہے جس میں اسرائیل ، فلسطینی اتھارٹی، لبنان، یمن اور ترکی سمیت دنیا بھر کے سیاستدانوں، ناگواروں، صحافیوں، ماہرین تعلیم اور انسانی حقوق کے کارکنوں کی جاسوسی نظام کے لیے استعمال کیا گیا ہے۔

ٹورنٹو میں قائم  یونیورسٹی آف مائیکروسافٹ اور سٹیزن لیب کے سیکیورٹی اہلکار کے پیغامات کے مطابق ان طاقتور ’’سائبر ہتھیاروں‘‘ نے دنیا بھر کے 100 سے زائد افراد کو نشانہ بنایا ہے۔

مائیکروسافٹ کا دعویٰ ہے کہ اس نے اپنی ونڈوز آپریٹنگ سسٹم میں ترمیم کرکے ان خامیوں کو دور کیا جن سے  اسرائیلی گروپ نے جاسوسی نظام کے ذریعے فائدہ اٹھایا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : امارات نے یمن کے جزیرے سقطری میں غیرملکی کرائے کے فوجی بھیجے ہیں

سٹیزن لیب کے مطابق یہ جاسوس ٹولز تل ابیب میں قائم ایک کمپنی کے ذریعہ تیار کیے گئے جو خفیہ طور پرچلتی ہیں۔ خصوصی طور پر ایسے سافٹ ویئر کو فروخت کرتی ہیں جو اسمارٹ فونز ، کمپیوٹرز اور کلاؤڈ کمپیوٹنگ خدمات میں جاسوسی کرنے کے قابل ہیں۔

اسرائیلی کمپنی کا باضابطہ نام "سائٹو ٹیک لمیٹڈ” ہے  لیکن یہ زیادہ تر ’’کنڈرو‘‘ کے نام سے جانا جاتا ہے۔

سٹیزن لیب کے محققین کو یہ شواہد ملے ہیں کہ یہ اسپائی ویئر متاثرین کے ذریعہ استعمال ہونے والی متعدد ایپلی کیشنز سے معلومات نکالنے میں کامیاب ہوگئے تھے جس میں جی میل ، اسکائپ ، ٹیلیگرام اور فیس بک شامل ہیں۔

یہ پروگرام انٹرنیٹ براؤزنگ ہسٹری  ، نیز متاثرین کے پاس ورڈ چوری کرنے اور ان کے کیمروں اور مائیکرو فون کو آن کرنے میں کامیاب رہا۔

مائیکرو سافٹ نے اشارہ کیا کہ اس نے فلسطینی علاقوں ، اسرائیل ، لبنان ، یمن ، اسپین ، برطانیہ ، ترکی ، آرمینیا اور سنگاپور میں اس پروگرام کے متاثرین کی شناخت کی ہے۔

کمپنی نے اشارہ کیا کہ یہ پروگرام ، جسے اسے ’’شیطانوں کی زبان‘‘ (شیطانوں کا تانگ) کہا جاتا ہے  معلومات حاصل کرنے ، متاثرہ افراد کے پیغامات پڑھنے اور فوٹو دیکھنے کے لیے مشہور سائٹوں جیسے دریافت ، ٹویٹر ، جی میل اور یاہو میں دراندازی کرنے میں کامیاب رہا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close