اہم ترین خبریںپاکستان

تاریخی شیعہ علمی مرکز جامعۃ المنتظر میں ” دارالقرآن والحدیث “ ریسرچ سنٹر قائم کرنے کا فیصلہ

جامعۃ المنتظر کے ناظم اعلیٰ نے کہا کہ قرآن مجید کے مختلف موضوعات میں اخلاقیات، احکامات فقہی، حدود و تعزیرات، قصص انبیاء علیہم السلام، اہلبیت اطہار اور صحابہ کرام کے تذکرے کے علاوہ بہت سے موضوعات ہیں

شیعیت نیوز: تاریخی شیعہ علمی مرکز جامعۃ المنتظر میں ” دارالقرآن والحدیث “ ریسرچ سنٹر قائم کرنے کا فیصلہ۔ وفاق المدارس الشیعہ پاکستان کے نائب صدر اور جامعۃ المنتظر کے ناظم اعلیٰ علامہ سید مرید حسین نقوی نے کہا ہے کہ مدارس دینیہ اسلام کے قلعے اور معاشرے کی اہم ضرورت ہیں، دینی مدارس صدیوں سے اسلامی معاشرے کی دینی ضروریات کو پورا کر رہے ہیں۔ علوم قرآن و حدیت، فقہ اسلامی اور عصری علوم آئندہ نسلوں تک منتقل کرنے کیلئے اسلامی تعلیمی ادارے اور منصوبے جاری ہیں۔ تحصیل علم کے بعد ہر سال ان مدارس سے ہزاروں طلبہ و طالبات مساجد، مدارس، امام بارگاہوں میں تبلیغ اسلام کیلئے اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔

لاہور میں علماء سے گفتگو میں علامہ مرید نقوی نے کہا کہ عظیم حوزہ علمیہ جامعۃ المنتظر کو جدید تقاضوں کے مطابق ڈھالنے کیلئے ابتدائی کام مکمل ہوچکا ہے، بہت جلد حوزہ علمیہ میں مختلف شعبہ جات کا اضافہ کیا جائے گا اور اسے جدید تقاضوں کے مطابق ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ کیا جا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:شیعہ مکتب فکر کی تکفیر کرنے والے ایڈیشنل کمشنر فیصل آباد ایوب بلوچ کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے، علامہ عبد الخالق اسدی کا مطالبہ

اس حوالے سے انہوں نے کہا کہ ”دارالقرآن والحدیث“ کے نام سے ایک ریسرچ سنٹر قائم کرنے کا پروگرام تشکیل پا چکا ہے، اس تحقیقی مرکز میں قرآن مجید کے مختلف موضوعات پر تحقیقات کی جائیں گی۔ ہماری کوشش ہوگی کہ مختلف قرآنی موضوعات پر ہر سال کم از کم ایک کتاب شائع کروائی جائے۔

جامعۃ المنتظر کے ناظم اعلیٰ نے کہا کہ قرآن مجید کے مختلف موضوعات میں اخلاقیات، احکامات فقہی، حدود و تعزیرات، قصص انبیاء علیہم السلام، اہلبیت اطہار اور صحابہ کرام کے تذکرے کے علاوہ بہت سے موضوعات ہیں، جن پر تحقیقاتی کام کیا جائے گا، تاکہ امت اسلامی کی رہنمائی کا فریضہ سرانجام دیا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ قرآن مجید علوم کا خزانہ ہے۔ قرآن زندہ معجزہ ہے، کتاب الہیٰ کو ہمیں اپنی زندگی میں لانا ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ قرآن مجید ہر دور کی ضروریات کو پورا کرتا ہے۔ دارالقرآن والحدیث میں ہر شعبے کا علیحدہ سربراہ ہوگا، جو قرآنی آیات پر کام کرے گا۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close