مقبوضہ فلسطین

چھے فلسطینی قیدیوں کی دوبارہ گرفتاری پر جہاد اسلامی اور حماس کا پیغام

شیعیت نیوز: فلسطین کے جہادی گروہوں نے صیہونی جیل سے فرار کرنے والے دو دیگر فلسطینی قیدیوں کی صیہونیوں کے ہاتھوں دو بارہ گرفتاری پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ جلد ہی ہرممکن طریقے سے فرار ہونے والے چھے فلسطینی قیدیوں کو رہا کرا لیا جائے گا۔

تحریک جہاد اسلامی نے جلبوع جیل سے فرار کرنے والے چھے فلسطینی قیدیوں کی صیہونیوں کے ہاتھوں دوبارہ گرفتاری کے بعد اعلان کیا ہے کہ صیہونی جیل کے حکام جلد ہی ان بہادر فلسطینی قیدیوں کو اپنے ہاتھوں سے آزاد کرنے پر مجبور ہوں گے۔

تحریک جہاد اسلامی کے رہنما شیخ خضر عدنان نے اتوار کو کہا کہ جنین کی ہائی سیکورٹی کی حامل جلبوع جیل سے اپنی جان بچا کر باہر نکلنے میں کامیاب ہونے والے فلسطینی قیدیوں کی دوبارہ گرفتاری سے اس جیل سے آزادی کی کارروائی میں غاصبوں کی ناکامی کو مٹایا نہیں جا سکتا۔

جہاد اسلامی کے رہنما نے زور دے کر کہا کہ جو غاصب کو شکست سے دوچار کرکے آزاد ہوتا ہے وہ بخوبی جانتا ہے کہ اسے دوبارہ گرفتار کیا جا سکتا ہے لہذا وہ اس سے زیادہ بڑی چیز کے لئے تیاری کرتا ہے۔

خضرعدنان نے فلسطینی عوام سے اپیل کی کہ وہ قیدیوں بالخصوص ان قیدیوں کی جو انفرادی سیل میں ہیں اور جنھیں بری طرح تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے یا جو بھوک ہڑتال پر ہیں ، ان کی حمایت جاری رکھیں۔

یہ بھی پڑھیں : صیہونی جیل سے فرار ہونے والے تمام فلسطینی قیدی گرفتار، غرب اردن میں کشیدگی

تحریک حماس کے ترجمان حازم قاسم نے بھی اعلان کیا ہے کہ آزادی ٹنل کے جیالوں کی دوبارہ گرفتاری کے باوجود یہ کارروائی فلسطینی مجاہدین کے عزم و ارادے کے سامنے صیہونی حکومت کے سیکورٹی سسٹم کی کمزوری کی ناقابل انکار دلیل کے طور پر باقی رہے گی۔

فلسطین کی استقامتی تحریک حماس نے اعلان کیا کہ جو کام جلبوع جیل کے چھے قیدیوں نے کیا وہ دلیری و بہادری ، عظیم جہاد اور ایک بڑی کامیابی تھی اور فلسطینی عوام کی جدوجہد کی تاریخ میں ایک کارنامے کے طور پر درج ہوگی۔

تحریک حماس نے کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ فلسطینی مجاہدین کو گرفتار کرنے والے قابض دشمن کے ہاتھ کاٹ دیے جائیں۔

حماس کے ترجمان فوزی برھوم نے کہا کہ غرب اردن میں سرنگ کے ذریعے جیل سے فرار ہونے والے مجاھدین کو پکڑنا اور ان پر ظلم کرنا دشمن کا شیوہ ہے مگر ایسے دشمن کے ہاتھ کاٹ دینے کا وقت آگیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ ہمیں اپنے وطن کی سرزمین کو اپنے ہم وطنوں پرظلم ڈھانے لے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ آزادی سرنگ سے فرار ہونے والے اسیران ایھم کممجی اور مناضل نفیعات کی دوبارہ گرفتاری اوران پر تشدد بدترین ظلم ہے۔

واضح رہے تحریک فتح کے ایک اور تحریک جہاد اسلامی کے پانچ قیدی جنھیں صیہونی حکومت نے طویل مدت قید کی سزا دی تھی ، سات ستمبر کو شمالی مقبوضہ فلسطین کی جلبوع جیل سے جوسیکورٹی کے لحاظ سے نہایت اہم شمار ہوتی ہے باہر نکلنے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close