اہم ترین خبریںسعودی عرب

سعودی عرب میں چار سالوں میں 44 سینما گھر کھل گئے

شیعیت نیوز: سعودی عرب میں سینما گھر کھولنے کی اجازت دیے جانے کے بعد چار سالوں میں 44 سینما کھل چکے ہیں۔

رپورٹ میں سبق ویب سائٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ مملکت میں پہلا سینما 18 اپریل 2018ء کو ریاض میں کھلا تھا جبکہ آخری 2 سینما 19 اگست 2021ء کو ریاض اور طائف میں کھولے گئے۔

سعودی وزارت اطلاعات و نشریات نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر 4 سالوں میں کھولے جانے والے سینما گھرسے متعلق ایک انفوگراف شیئر کیا۔

اس انفوگراف کے مطابق سعودی عرب میں سینما گھرکا سب سے زیادہ افتتاح 2018ء سے 2021ء کے دوران اگست میں ہوا۔

سعودی وزارت اطلاعات و نشریات کے مطابق ہر سال اگست میں 10 سینما کھولے گئے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے 13 میں سے 9 صوبوں میں سینما کھل چکے ہیں جن میں سے 21 ریاض، 9 مکہ مکرمہ ریجن اور 8 مشرقی ریجن میں واقع ہیں۔

سعودی وزارت اطلاعات کا کہنا ہے کہ مملکت بھر میں کھولے جانے والے ان سینماؤں کی مالک 5 کمپنیاں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : آزادی کی سرنگ کے جیالے ، عنقریب سر اٹھائے ہوئے صیہونی جیل سے باہر نکلیں گے، حماس

خیال رہے کہ 2019ء میں سینما گھروں کی تعداد 12 تھی جو 2020ء میں بڑھ کر 33 تک پہنچی اور اب 44 ہو گئی ہے۔

سعودی عرب نے 35 برس کے بعد ملک میں سینما گھر کھولنے کی اجازت دیتے ہوئے پہلا لائسنس امریکی کمپنی اے ایم سی انٹرٹینمنٹ کو جاری کیا تھا۔

18 اپریل 2018ء کو ریاض میں پہلے سینما گھر کی تقریب رونمائی ہوئی تھی جبکہ سینما کو عوام کے لیے کھولنے سے قبل آزمائشی طور پر کامیاب ترین فلم ’’بلیک پینتھر‘‘ کی اسکریننگ بھی کی گئی تھی۔

یاد رہے کہ مذہبی حلقوں کی جانب سے سینما گھروں کو بے حیائی کے فروغ اور معاشرے کے لیے نامناسب سمجھا جاتا تھا، جس کے بعد 1980ء کی دہائی میں اس پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ تاہم ان کی دوبارہ بحالی کو اصلاحات پسند ولی عہد محمد بن سلمان کی جدت پسند ریاست کا ایک حصہ کہا گیا کیونکہ تیل کی قیمتوں میں عدم استحکام اور معیشت پر اس کے اثرات کے باعث سعودی ولی عہد کی جانب سے اس طرح کی مختلف اصلاحات متعارف کروائی گئی تھیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close