دنیا

فرانسیسی صدر کا سربراہ داعش ’’صحارا‘‘ عدنان ابو ولید کی ہلاکت کا دعویٰ

شیعیت نیوز: فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے عالمی شدت پسند تنظیم داعش کے صحارا ریجن کے سربراہ عدنان ابو ولید الصحاروی کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق دولت اسلامیہ کا سربراہ عدنان ابو ولید گریٹر صحارا میں فرانسیسی فوجیوں کے ایک آپریشن میں ہلاک ہوا۔

فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے بھی سوشل میڈیا پر جاری اپنے بیان میں بتایا کہ عدنان ابو ولید فرانسیسی افواج کے ہاتھوں مارا گیا تاہم انہوں نے آپریشن کی تفصیلات کے بارے میں نہیں بتایا کہ یہ آپریشن کہاں کیا گیا۔

ایمانوئیل میکرون کا کہنا تھا کہ یہ دہشتگرد گروہوں کے خلاف جنگ میں ہماری ایک اور بڑی کامیابی ہے۔

یاد رہے کہ عدنان ابو ولید نے 2015ء میں صحارا ریجن میں داعش کی بنیاد رکھی تھی اور داعش لیڈر عدنان ابو ولید امریکی فوجیوں اور غیرملکی امدادی کارکنوں پر حملوں میں مطلوب تھا۔

امریکہ نے 2017ء میں عدنان ابو ولید کے بارے میں معلومات فراہم کرنے پر 50 لاکھ ڈالر انعام کا اعلان بھی کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ عراق کے پارلیمانی الیکشن سبوتاژ کرنے کے درپے ہے، عراقی رکن پارلیمنٹ

دوسری جانب سیکڑوں جنگ مخالفین نے لندن میں شروع ہونے والی فوجی نمائش کے خلاف مظاہرے کیے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ایکسل کے نام سے سامان حرب کی یہ نمائش مشرقی لندن میں کڑے حفاظتی انتظامات اور جنگ کے مخالفین کے مظاہروں کے درمیان آج سے شروع ہوگئی ہے۔

مظاہرے میں شریک ایک جنگ مخالف کارکن کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں جنگیں ایسی نمائشوں کے ذریعے شروع ہوتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ درحقیقت جنگوں کے معاہدے اس طرح کی نمائشوں کے دوران طے پاتے ہیں۔

جنگ مخالف مظاہرے میں شریک ایک اور شخص نے کہا کہ جب تک عسکری نمائشیں ہوتی رہیں گی، دنیا کو چین نصیب نہیں ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ میں فلسطین کا پرچم اپنے ساتھ لایا ہوں کیونکہ حکومت برطانیہ اسرائیل کو بم اور میزائیل فروخت کرتی ہے جن کے ذریعے اسرائیل فلسطینیوں کا قتل عام کرتا ہے۔

اعداد وشمار کے مطابق دنیا بھر میں بموں اور جنگی ساز وسامان کا ترسٹھ فی حصہ امریکہ اور برطانیہ فروخت کرتے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر ہتھیار مغربی ایشیا کے ملکوں اور خاص طور سے سعودی عرب کو فروخت کیے جاتے رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close