اہم ترین خبریںدنیا

کابل کے شیعہ نشین علاقہ میں دو بسوں میں ہونے والے بم دھماکوں میں 11 افراد جاں بحق

شیعیت نیوز: افغانستان کے دارالحکومت کابل کے شیعہ نشین علاقہ میں دو بسوں میں ہونے والے بم دھماکوں کے نتیجے میں 11 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں۔

کابل پولیس کے ترجمان بصیر مجاہد کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کا یہ واقعہ شیعہ اقلیتی کمیونٹی ہزارہ اکثریت والے علاقوں میں ہوا ہے۔ جب کہ اسی ماہ کے آغاز میں اسی نوعیت کے حملوں میں 12 شہری جاں بحق ہوگئے تھے۔

آج مسافر بسوں میں ہونے والے دو بم دھماکوں میں کم از کم 11 افراد جاں بحق اور 6 زخمی ہوگئےہیں، جنہیں اسپتال منتقل کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ابھی تک کسی نے ان دھماکوں کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب اسلام کے خلاف برسرپیکار ہے، یمن کے مفتی اعظم

یاد رہے کہ افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کے اانخلا کے اعلان کے بعد سے پُر تشد کارروائیوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔ جب کہ وہابی دہشت گرد گروپوں کی جانب سے ہزارہ کمیونٹی کو نشانہ بنانے کا سلسلہ کافی عرصے سے جاری ہے اور گزشتہ ماہ میں سید الشہداء اسکول میں ہونے والے بم دھماکوں کے نتیجے میں 80 کے قریب طالبات شہید ہوگئیں تھیں۔ طالبان دہشت گردوں نے اس حملے کی ذمہ داری داعش دہشت گرد تنظیم پر عائد کی تھی۔

دوسری طرف افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ہونے والے بم دھماکوں کی ذمہ داری وہابی دہشت گرد تنظیم داعش نے قبول کرلی ہے۔

داعش دہشت گردوں نے کل کابل میں دو مسافر گاڑیوں کو نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں متعدد افراد شہید اور زخمی ہوگئے تھے۔ داعش دہشت گردوں نے کابل کے شیعہ نشین علاقہ میں یہ حملے کئے تھے۔ جاں بحق ہونے والوں میں افغان حکومت کی فلم بنانے والی کمپنی کے 2 اہلکار بھی شامل ہیں۔

افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کے انخلاء کے موقع پر وہابی دہشت گردوں کے وحشیانہ حملوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔

 

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close