عراق

شمالی عراق میں تین ترک فوجیوں کی ہلاکت

شیعیت نیوز: عراق کے شمالی علاقوں میں واقع ترک افواج کے ٹھکانوں کو، پی کے کے کےعناصر نے، نشانہ بنایا جس میں ترک فوجیوں کی ہلاکت ہوگئی۔

پی کے کے عناصر کے اس حملے میں ایک شخص کے زخمی ہونے کی بھی خبر ہے۔ یہ حملہ ترک افواج کے خصوصی آپریشن کے موقع پر انجام دیا گیا ۔

ترک وزارت دفاع نے بھی ایک بیان جاری کرکے اس حملے اور ترک فوجیوں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

یاد رہے کہ ترکی نے آپریشن پنجہ کے تحت، پی کے کے کی ملیشیا کو نشانہ بنایا ۔ یہ آپریشن انیس اپریل، سن دو ہزار بائیس کوعراق کے کردستان علاقے میں شروع ہوا تھا۔

ترک افواج نے دعویٰ کیا ہے کہ اس آپریشن میں پی کے کے عناصر کو نشانہ بنایا جا رہا ہے جبکہ بغداد حکومت اور دیگر سیاسی حلقوں نے ترکی کے اس اقدام پر سخت برہمی ظاہر کرتے ہوئے اسے عراق کی ارضی سالمیت پر حملہ قرار دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : متحدہ عرب امارات یمنی صوبے حضرموت پر قبضہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے، یمن

دوسری جانب عراق میں ایرانی سفیر محمد کاظم آل صادق نے عراقی مزاحمتی فورس حشد الشعبی کے کمانڈر فالح الفياض کے ساتھ ملاقات کی ہے۔

حشد الشعبی کے شعبہ اطلاعات عامہ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق بغداد میں واقع حشد الشعبی کے دفتر میں ہونے والی اس ملاقات میں ایران و عراق کے درمیان طے شدہ مفاہمتوں پر عملدرآمد اور خصوصا دوطرفہ تعلقات میں توسیع کے رستوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

واضح رہے کہ محمد کاظم آل صادق نے سوموار کے روز عراقی مشیر قومی سلامتی قاسم الاعرجی کے ساتھ بھی ملاقات کی تھی جس میں انہوں نے تہران کی جانب سے محمد الشیاع السودانی حکومت کو کامیاب بنانے کے لئے مکمل حمایت اور توانائی کے شعبے میں عراق کی مدد پر تاکید کی اور زور دیتے ہوئے کہا تھا کہ السودانی حکومت کامیابی، پیشرفت اور قوم کی خدمت کے لئے ضروری تمام معیارات کی حامل ہے۔

 

متعلقہ مضامین

Back to top button